You are here: فلسطین اسرائیلی فوجی کو طمانچہ مارنے فلسطینی بچی کے خاندان پراسرائیلی پابندیاں
 
 

اسرائیلی فوجی کو طمانچہ مارنے فلسطینی بچی کے خاندان پراسرائیلی پابندیاں

E-mail Print PDF

0Pala9844مقبوضہ بیت المقدس (فلسطین نیوز۔مرکز اطلاعات) اسرائیلی وزیر دفاع آوی گیڈور لائبرمین نے اسرائیلی فوجیوں کو تھپڑ مارنے کے الزام میں گرفتار فلسطینی بچی عہد تمیمی کے خاندان پر ناروا پابندیاں عائد کردی ہیں۔

فلسطین نیوز کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق اسرائیلی وزیر دفاع نے عہد تمیمی کے اہل خانہ اور دیگر اقارب کے خلاف انتقامی کارروائی کرتے ہوئے 20 افراد کے اسرائیل میں داخلے پر پابندی عائد کردی ہے۔

خیال رہے کہ عہد تمیمی کو اسرائیلی فوج نے انیس دسمبر دو ہزار سترہ کو حراست میں لیا تھا۔ اس پر الزام عائد کیا گیا تھا کہ اس نے 15 دسمبرکو اسرائیلی فوجیوں کو دھکے دیے اور ایک اہلکار کے منہ پر تھپڑ رسید کیا تھا۔

اسرائیلی وزیر دفاع نے عہد تمیمی کے والد کی بیرون ملک سفر پر پابندی عائد کردی ہے۔ صیہونی حکام کا کہنا ہے کہ عہد تمیمی کے والدین اور دیگر اقارب اسرائیل کے خلاف نفرت پھیلانے کی کوشش کررہے ہیں۔

لائبرمین کا کہنا ہے کہ تمیمی خاندان کے ساتھ سخت معاملہ کیا جائے گا۔ انہیں گرفتار کرکے ان کے خلاف مقدمات بھی چلائے جاسکتے ہیں۔