You are here: مقالاجات صیہونی فوج کی وحشیانہ طاقت کے استعمال کی تحقیقات کی جائیں: یواین
 
 

صیہونی فوج کی وحشیانہ طاقت کے استعمال کی تحقیقات کی جائیں: یواین

E-mail Print PDF

0Pala9855نیویارک (فلسطین نیوز۔مرکز اطلاعات) اقوام متحدہ نے اسرائیلی فوج کی جانب سے نہتے فلسطینیوں کے خلاف طاقت کے وحشیانہ استعمال کی شدید مذمت کرتے ہوئے پرتشدد حربوں کے استعمال کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

فلسطین نیوز کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے ترجمان اسٹیفن ڈوگریک نے نیویارک میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے میں پُرامن فلسطینیوں کے خلاف طاقت کے استعمال کی فوی اور باریکی کے ساتھ تحقیقات کی جائیں اور بتایا جائے کہ آیا اسرائیلی فوج نہتے فلسطینیوں کے خلاف کیوں کر طاقت کا استعمال کررہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کے عہدیداروں کو اسرائیلی فوج کے ہاتھوں فلسطینیوں کے خلاف طاقت کےاستعمال اور بے گناہ فلسطینیوں کی شہادت اور بڑی تعداد میں زخمی ہونے پر گہری تشویش ہے۔

ترجمان نے کہا کہ مشرق وسطیٰ کے لیے اقوام متحدہ کے امن مندوب نیکولائی ملاڈینوف نے بھی غرب اردن اور غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کے ہاتھوں فلسطینی شہریوں کی ہلاکتوں اور بڑی تعداد میں زخمی ہونے کے واقعات پر تشویش کا اظہار کیا گیا ہے۔

یو این ترجمان کا کہنا ہے کہ دو روز قبل اسرائیلی فوج نے غزہ اور غرب اردن میں دو کم عمر لڑکوں کو گولیاں مار کر شہید کردیا تھا۔ اسرائیلی فوج کے اس طرح کے پرتشدد حربوں پر عالمی ادارے کو گہری تشویش لاحق ہے۔

خایل رہے کہ جمعرات کو دو فلسطینی لڑکے اسرائیلی فوج ریاستی دہشت گردی میں شہید ہوگئے تھے۔ ایک فلسطینی کو غزہ کی پٹی میں البریج کے مقام پر گولیاں مار کرشہید کیا گیا جب کہ دوسرے کو غرب اردن کے شمالی شہر نابلس میں عراق بورین کے مقام پر جام شہادت نوش کردیا تھا۔

ڈوگریک کا کہنا تھا کہ اسرائیلی فوج کے ہاتھوں فلسطینی شہریوں کی ہلاکتوں کے واقعات اور اسرائیل کی جانب سے نہتے فلسطینیوں کے خلاف طاقت کے استعمال کی باریکی کے ساتھ اور فوری تحقیقات کی جانی چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ عالمی برادری کو چاہیے کہ وہ علاقائی قیادت کو خطے میں کشیدگی بڑھانے کے بیانات سے روکنے کے لیے اقدامات کرے۔