You are here: حماس انڈونیشیا کے مذہبی رہنما کا دورہ اسرائیل ناقابل قبول ہے: حماس
 
 

انڈونیشیا کے مذہبی رہنما کا دورہ اسرائیل ناقابل قبول ہے: حماس

E-mail Print PDF

0Pala9110غزہ (فلسطین نیوز۔مرکز اطلاعات) حماس نے انڈونیشیا کے ایک مذہبی رہنما کی قیادت میں ایک وفد کے دورہ اسرائیل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے فلسطینیوں کے زخموں پر نمک پاشی قرار دیا ہے۔

فلسطین نیوز کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق حماس کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ انڈونیشی عالم دین اور سرکردہ مذہبی رہنما یحییٰ خلیل ثقوب کا دورہ اسرائیل فلسطینی قوم کے لیے ناقابل قبول ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ اگرچہ انڈونیشیا اور اسرائیل کے درمیان سفارتی تعلقات قائم ہیں مگر آج تک انڈونیشیا کے کسی مذہبی رہنما نے صیہونی ریاست کے ساتھ تال میل بڑھانے کی کوشش نہیں کی۔ یہ پہلا موقع ہے جب ایک سرکردہ عالم دین ایک وفد کے ساتھ صیہونی ریاست کے دورے پر ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ حماس اور فلسطینی قوم انڈونیشیا کو ایک بڑا مسلمان ہونے کی بناء پر قدرکی نگاہ سے دیکھتی ہے۔ انڈونیشیا نے ہمیشہ فلسطینی قوم کی جدو جہد آزادی کی حمایت کی مگر انڈونیشیا کے عالم دین اور کے ایک وفد کے دورہ اسرائیل کی ہم شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اس گھٹیا اقدام کو مسترد کرتے ہیں۔ یہ دورہ فلسطینی قوم کی توہین اور مظلوم فلسطینیوں کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہے۔ اس طرح کے دوروں سے نہتے فلسطینیوں کے خلاف صیہونی ریاست کے جرائم اور ریاستی دہشت گردی کو جواز ملتا ہے۔