You are here: فلسطین فلسطینی لیڈرالشیخ رائد صلاح کی قید تنہائی مسلسل جاری
 
 

فلسطینی لیڈرالشیخ رائد صلاح کی قید تنہائی مسلسل جاری

E-mail Print PDF

0Pala7213مقبوضہ بیت المقدس (فلسطین نیوز۔مرکز اطلاعات) اسرائیلی جیل میں قید بزرگ فلسطینی رہنما اور اسلامی تحریک کے سربراہ الشیخ رائد صلاح کی کئی ماہ سے جاری قید تنہائی بدستور جاری ہے۔

 

فلسطین نیوز کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق گذشتہ روز اسرائیل کی مجسٹریٹ عدالت نے الشیخ راید صلاح کے مقدمہ کی

کارروائی نامعلوم مدت کے لیے ملتوی کردی،جو اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ صیہونی عدلیہ اور جیلر ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت الشیخ راید صلاح کو قید تنہائی میں رکھنا چاہتے ہیں۔

الشیخ رائد صلاح کے وکیل ایڈووکیٹ مصظفیٰ محامید نے کہا کہ صیہونی مجسٹریٹ عدالت نے الشیخ رائد صلاح کے مقدمہ کی سماعت کے لیے خصوصی سماعت کا اعلان کیا تھا۔ اس موقع پر اسرائیلی پراسیکیوٹر جنرل کی جانب سے الشیخ رائد صلاح کے خلاف جو بیانات جمع کرائے گئے وہ سب عبرانی زبان میں تھے جب ان کا عربی میں ترجمہ کیا گیا تو پتا چلا اسرائیلی حکام کے پیش کردہ دعوؤں کا جوابی بیان ان کے موکل کے دفاعی پینل میں سے کسی کے پاس نہیں۔

اس موقع پر وکلاء دفاع بے عینی شاہدین کے بیانات سننے سے انکار کردیا۔ ان کا کہنا تھا کہ صیہونی انٹیلی جنس حکام کی طرف سے الشیخ رائد صلاح کے خلاف پیش کردہ الزامات میں بعض نئے شامل کیے گئے ہیں۔ ان میں ان کے سابقہ جمعہ کی تقاریر کو بھی بنیاد بنایا گیا ہے۔ محامید کا کہنا تھا کہ صیہونی حکام جعلی الزامات کے ذریعے الشیخ رائد صلاح کے خلاف مقدمہ کی کارروائی کو دانستہ طور پر طول دینا چاہتے ہیں۔

الشیخ رائد صلاح کے وکیل نے کہا کہ صیہونی عدالت نے ان کے موکل کے مقدمہ کی سماعت 22 مارچ تک ملتوی کردی  ہے۔

خیال رہے کہ الشیخ رائد صلاح کو اسرائیلی فوج نے 15 اگست کو حراست میں لیا تھا۔ ان کے خلاف عائد کردہ الزامات میں صیہونی ریاست کے خلاف تشدد پر اکسانے جیسے نام نہاد الزامات شامل ہیں۔ الشیخ رائد صلاح کئی ماہ سے عسقلان جیل میں قید تنہائی میں ہیں نہاں انہیں کسی قسم کی بنیادی انسانی سہولیات تک میسر نہیں۔ ان کے وکلاء بار بار ان کی قید تنہائی ختم کرنے کا مطالبہ کرچکے ہیں مگر صیہونی حکام کی طرف سے ان کے مطالبات کو یکسر مسترد کردیا گیا ہے۔